وزیراعظم ہاؤس میں9 اپریل کو کیا ہوا؟ شیخ رشید نےحیرت انگیز انکشاف کر دیا

Advertisements

راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک ) وزیراعظم ہاؤس میں نو اپریل کی رات کیا ہوا؟ اس حوالے سے سابق وزیر داخلہ شیخ رشید نے میڈیا کو اہم بات بتادی۔ عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کی جس میں انہوں نے اس اہم راز سے بھی پردہ اٹھایا جو آج کل بہت زیادہ بحث کا موضوع بنا ہوا ہے۔شیخ رشید نے کہا کہ جب پارلیمنٹ میں قیدیوں کی وین آجائے،
رات کو عدالتیں کھل جائیں تو سمجھ میں آجاتا ہے کہ کیا ہونے والا ہے۔ دوسری جانب اکستان مسلم لیگ (ق) کے وفد نے سابق وفاقی وزیر طارق بشیر چیمہ کی سربراہی میں سابق صدر اور پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زر داری سے ملاقات کی اس موقع پر مسلم لیگ (ق) کے صدر چوہدری شجاعت حسین کے صاحبزداے چوہدری سالک حسین بھی موجود تھے ۔ ملاقات میں آصف علی زر داری نے تحریک عدم اعتماد کی کامیابی میں ووٹ دینے پر طارق بشیر چیمہ اور چوہدری سالک حسین کا شکریہ اداکیا اور ان سے کہاکہ ان کا خیرسگالی کا پیغام چوہدری شجاعت حسین تک پہنچا دیا جائے چوہدری سالک حسین نے کہاکہ میرے والد نے آپ سے جو وعدہ کیا تھا وہ ہم نے ووٹ دیکر پورا کیا ہے ۔چوہدری شجاعت حسین ایک وضع دار سیاسی رہنما ہیں اور تمام سیاسی قیادت جس طرح احترام کرتی ہیں اس پر ہم ان کے شکر گزار ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کہ ملاقات میں پنجاب کی وزارت اعلیٰ کے معاملات پر بات چیت ہوئی اور مسلم لیگ (ق) کے رہنمائوں نے آصف علی زر داری سے درخوارست کی کہ سپیکر پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کو وزیر اعلیٰ بنانے کا اپناوعدہ پورا کرائیں جس پر آصف علی زر داری مسکر اپڑے اور کہاکہ میں نے تو اپنا وعدہ پورا کر دیا تھا اور مسلم لیگ (ن) نے میری درخواست پر پرویز الٰہی کو وزیر اعلیٰ بنانے کا فیصلہ کرلیا تھا مگر چوہدری پرویز الٰہی نے پھرتی دکھائی اور وعدہ خلافی کی اور بنی گالا چلے گئے ۔ انہوںنے کہاکہ موجودہ حالات میں پرویز الٰہی کو پنجاب کا وزیراعلیٰ بنانا اب مشکل ہے ، پیپلز پارٹی حمزہ شہباز کی حمایت کر چکی ہے ، چوہدری پرویز الٰہی کو یہ باتیں پہلے سوچنی چاہئیں ۔

Leave a Comment