تحریک عدم اعتماد کی کامیابی کےبعد صدر کون ہوگا؟مولانافضل الرحمان نے بتا دیا

Advertisements

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)جمیعت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ میں صدارت کے لیے امید وار نہیں ہوں،معاملات تحریک عدم اعتماد کے بعد طے ہوں گے۔ نجی ٹی وی ڈان نیوز کے پروگرام کے میزبان نے سوال کیا کہ میں نے شہباز شریف سے بھی صدارت سے متعلق سوال کیا تھا کہ آصف علی زرداری اور
مولانا فضل الرحمان میں سے آپ کس کو ٹائی باندھیں گے تو اس پر شہباز شریف نےجواب دیا کہ میں اپنی ٹائی اتار دوں گا،تو آپ بتا دیں کے صدارت کا امید وار کون ہو گا؟اس پر مولانا فضل الرحمان نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ میں صدارت کا امیدوار نہیں ہوں،جو چیزیں طے کریں گے وہ تحریک عدم اعتماد کے بعد کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس پلان ہے لیکن ابھی بتا نہیں رہے۔ان کا کہنا تھا کہ آرمی چیف سے خفیہ ملاقاتوں کی ضرورت حکمرانوں کو ہے جو کہ آخری معاملات طے کرنےکے لیے ہاتھ پاوں مار رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اتحادیوں کے ساتھ سارے معاملات طے پا چکیں ہیں کسی کو کوئی ٹکٹ دینے کا وعدہ نہیں کیا ہے، ایم کیو ایم کی بلدیاتی الیکشن سے متعلق کچھ تجاویز تھیں جو ہم نے مان لیں ہیں۔مولانا فضل الرحمان نے حکومت پر طنز کرتے ہوئے کہا کہ جب آپ لوگ خرید کر حکومت بنا رہے تھے تو تب آپ کو منکر اور معروف نظر نہیں آ رہے تھے۔

Leave a Comment