’’ہم بُری طرح پھنس چکے ہیں ‘‘ وزراء یہ الفاظ کسے کہہ رہے ہیں؟ حامد میر کا تہلکہ خیز انکشاف

Advertisements

اسلام آباد(نیوز ڈیسک ) سینئر صحافی و تجزیہ کار حامد مییر کا کہنا ہے کہ انہیں حکومتی وزیر نے کہا کہ ہم بہت برے پھنس گئے ہیں۔انہوں نے نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گذشتہ روز ایک حکومتی وزیر نے کال کی اور کہا کہ میں آپ سے ملنا چاہتا ہوں، ان کے شدید اصرار پر ان سے ملنے گیا۔حکومت وزیر نے کہا کہ ہم بہت
برے پھنس گئے ہیں جب کہ وزیر نے کہا کہ یہ بات کسی کو نہیں بتانا۔حامد میر نے کہا کہ اس کے بعد حکومت کے ایک اتحادی کی کال آئی تو ان کے اصرار پر ان کے پاس بھی جا پہنچا، اتحادی نے بھی یہ سب کچھ بتایا لیکن کسی کو نہ بتانے کا کہا۔۔سینئر صحافی کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی اور ن لیگ کے کیمپ سے کوئی بات سامنے نہیں آ رہی لیکن میڈیا پر جو کچھ آ رہا ہے، خواہ وہ حکومت کی طرف سے ہو یا اپوزیشن کی وہ مکمل نہیں۔حامد میر نے مزید کہا کہ اتحادی وزیراعظم کے ادھر ادھر چکر کاٹنے پر بہت خوش ہیں۔دوسری جانب وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے اپوزیشن اتحاد کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کی جانب سے اعلان کردہ لانگ مارچ پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ اگر عدم اعتماد کی تحریک میں ووٹنگ کے لیے اپوزیشن کے نمبرز پورے ہیں تواسلام آباد میں دھرنوں کی کیا ضرورت ہے؟ ہم عدم اعتماد کی تحریک کا سیاسی وجمہوری طریقے سے مقابلہ کریں گے ، ارکان کودھمکی دینے یا ان کی راہ میں رکاوٹ ڈالنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے تاہم کچھ چیزیں ایسی ہیں جو وزیراعظم قوم سے شیئر کرنا چاہتے ہیں ۔ ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ جلسے کے ذریعے وزیراعظم عمران خان قوم کواعتماد میں لیں گے ، ہم وفاقی دارالحکومت میں دھرنا دینے نہیں آرہے ، اس بات میں فرق محسوس کریں ، پیپلزپارٹی نے لانگ مارچ کیا تو حکومت نے کہیں نہیں روکا ، لانگ مارچ کرنے والوں کوآئندہ بھی نہیں روکا جائے گا ، عدم اعتماد کی تحریک کا سیاسی اور جمہوری طریقے سے مقابلہ کریں گے ، اپوزیشن والے نمبرز پورے کرنے کے دعوے کررہے ہیں ، اگر نمبرزپورے ہیں تواسلام آباد میں دھرنوں کی کیا ضرورت ہے۔

Leave a Comment